گلگت بلتستان میں عملا گورنر راج نافذ ہو چکا ہے، برجیس طاہر مسلم لیگ کی انتخابی مہم چلارہے ہیں

گلگت بلتستان میں عملا گورنر راج نافذ ہو چکا ہے، برجیس طاہر مسلم لیگ کی انتخابی مہم چلارہے ہیں

2 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

1 (3)

گلگت ( عبدالر حمان بخاری) پاکستان پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کے رہنماؤ ں نے کہا ہے کہ گورنر برجیس طاہر ن لیگ کی انتخابی مہم چلا رہے ہیں اور غیر قانونی بنیادوں پر ٹھیکوں کی بندر بانٹ اور بھر تیوں میں ملوث ہو رہے ہیں اگر یہ طرز عمل فوری طور پر بند نہ کیا گیا تو عوام کو لے کر سڑکوں پر نکل کر دھرنے دینگے ۔ اتوار کے روز پارٹی سیکریٹریٹ میں پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پی پی پی کے سیکریٹری جنرل آفتاب حیدر ایڈو کیٹ چیئر مین ابراہم ،امجد ایڈو کیٹ ،سعدیہ دانش اور ڈاکٹر علی مدد شیر سمیت دیگر رہنماؤں نے کہا کہ بر جیس طاہر کی بحیثیت گورنر تقرری آئین کی سنگین خلاف ورزی ہے اور موصوف نے گورنر ہاؤس کو پارٹی سیکر یٹریٹ بنا رکھا ہے ۔ مختلف اضلاع میں جاکر عوام سے ن لیگ کے لئے ووٹ مانگ رہے ہیں انتخابی حلقوں میں خصوصی دورے کر کے پارٹی امیدواروں کی کامیابی کے لئے راہ ہموار کر رہے ہیں جو کہ آئین و قانون کی سنگین خلاف ورزی ہے ۔

گلگت بلتستان میں عملا گورنر راج نافذہو چکا ہے نگران حکومت بھی غائب ہے گورنر اپنے منصب سے نیچے آ کر ایسے چھوٹے ملازمین کو تنگ کر رہے ہیں جو پی پی پی کے ووٹر اور سپورٹر ہیں۔

سابق چیف سیکریٹری نے گورنر کے غیر قانونی احکامات ماننے سے انکار کیا تو ان کو تبدیل کر کے اپنی مرضی کا چیف سیکریٹری تعینات کیا ہے جنہوں نے گورنر کے اقدامات پر خاموشی اختیار کر رکھی ہے برجیس طاہر گلگت بلتستان میں ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کر رہا ہے ۔ اخباری مالکان پر دباؤ ڈال کر آزادی صحافت پر قدغن لگا رہے ہیں پی پی پی رہنماؤں نے کہا کہ بر جیس طاہر گلگت بلتستان کے وسائل پر ہاتھ صاف کرنا چاہتے ہیں نیٹکو میں 2 کروڈ روپے سے ٹائروں کی خریداری کا ٹھیکہ غیر قانونی طور پر حافظ حفیظ الرحمان کے رشتہ دار کو دیا گیا ہے اسی طرح 9 کروڈ روپے مالیت کا جیلوں کی اپ گریڈیشن کا ٹھیکہ بھی چور دروازے ن لیگ کے عہدیدار کو دیا گیا ہے انہوں نے انکشاف کیا کہ گزشتہ روز حفیظ الرحمان کے بندوں کو انسپکٹر جنرل آف پولیس نے غیر قانونی طور پر بھر تی کیا ہے ۔ بر جیس طاہر اداروں پر اثر انداز ہو رہے ہیں ۔

دیامر بھاشا ڈیم کے 32 ارب روپے پر بر جیس طاہر نے ہاتھ صاف کرنے کے لئے ڈپٹی کمشنر دیامر عثمان احمد کو ہٹانے کا فیصلہ کرتے ہوئے ایک جونیئر آفیسر کو ڈی سی تعینات کرنے کی حکمت عملی تیار کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بر جیس طاہر نے اپنی اے ڈی پی دیامر میں فروخت کر دی ہے پی پی پی رہنماؤں نے کہا کہ گلگت بلتستان کونسل کا بجٹ گزشتہ 2 سالوں سے منظور نہیں کیا گیا ہے اور منصوبے باہر باہر ہی تقسیم کئے جارہے ہیں لہذا کونسل ممبران نے بجٹ اجلاس میں شرکت کرنے یا نہ کرنے کے بارے میں ابھی تک فیصلہ نہیں کیا ہے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے میں ایکنامک زون گلگت بلتستان میں نہیں رکھا ہے ۔ پی پی پی کو اس حوالے سے شدید تحفظا ت ہیں یہی وجہ ہے کہ کونسل کے اجلاس میں اس مسئلے بارے میں بائیکاٹ کیا تھا انہوں نے کہا کہ اگر گورنر برجیس طاہر باز نہ آئے تو عوام کولے کر سڑکوں پر آئینگے

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔