ضیاء دور میں ملک میں تکفیری سوچ کا بیج بویا گیا جو آج تناور درخت کی شکل اختیار کرگیا ہے۔ مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان

ضیاء دور میں ملک میں تکفیری سوچ کا بیج بویا گیا جو آج تناور درخت کی شکل اختیار کرگیا ہے۔ مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان

2 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

گلگت: (ایم ڈبلیو ایم میڈیا سیل) آرمی پبلک سکول کے معصوم بچوں نے خون کا نذرانہ پیش کرکے تکفیری فکر کا پردہ چاک کردیاہے۔ ان نونہالوں کی قربانی نے قوم کو ایک بار پھر دشمن کے مقابلے میں متحد کردیا، رہتی دنیا تک قوم کے ان بچوں کی قربانی یاد رکھی جائیگی۔

مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے سیکرٹری جنرل علامہ نیئر عباس مصطفوی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ضیاء الحق کے آمرانہ دور حکومت میں ملک عزیز میں تکفیری سوچ کا بیج بویا گیا اور آج یہ ایک تناور درخت کی شکل اختیار کرگیا ہے۔ افواج پاکستان ملک سے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے پوری تندہی سے آپریشن میں مصروف ہے جبکہ اس ملک کے حکمرانوں کو آج تک یہ توفیق نصیب نہ ہوئی کہ اس تکفیری سوچ کے خاتمے کیلئے موثر اقدامات اٹھائے اور ان گمراہ کن نظریات کے پھیلانے والے مراکز کو نہ صرف بند نہیں کیا گیا بلکہ سرکاری سطح پر ان کی حوصلہ افزائی کی گئی۔ ہمارے حکمرانوں نے ماضی کی غلطیوں سے کچھ نہیں سیکھا ہے اور آج بھی حکمران اپنی یاری دوستیاں نبھانے اور چند ڈالروں کے عوض ملک کا امن دائو پر لگارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں آج بھی ملک کے بڑے بڑے شہروں میں تکفیری فکر کو پروان چڑھانے والی فیکٹریاں بلا خوف خطر کام کررہی ہیں جن پر نکیل ڈالنے کی نہ صرف کوئی جرات کررہا بلکہ اپنے اقتدار کو طول دینے کی غرض سے ان کی آشیر باد حاصل کی جارہی ہے۔ افواج پاکستان کو ملک کی سرحدوں کی حفاظت کے ساتھ ساتھ نظریاتی سرحدوں کی بھی حفاظت کا فریضہ انجام دینے پڑے گا۔ ملک کے دور دراز علاقوں میں فوجی آپریشن کے ساتھ ساتھ شہری علاقوں میں موجود دہشت گردوں کے حامی اور سہولت کاروں کے خلاف بڑے آپریشن کی ضرورت ہے۔ اس کے علاوہ ان مدارس کے خلاف بھرپور ایکشن ہونا چاہئے جوتکفیری فکر کو پروان چڑھارہے ہیں اور اگر خدانخواستہ ایسا نہ کیا گیا تو ہمارے فوجی جوانوں کی قربانیاں رائیگان جائینگی اور دہشت گردی پر قابو پانا مشکل ہوجائیگا ۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔