سانحہ راولپنڈی کی جوڈیشل انکوائری سپریم کورٹ کی نگرانی میں کروائی جائے، قاضی نثار احمد کا مطالبہ

1 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

گلگت (پریس ریلیز) پنجاب حکومت نے جو جوڈیشل انکوائری کا اعلان کیا ہے وہ سپریم کورٹ اآف پاکستان کی زیر نگرانی ہونی چاہیے، ورنہ پہلے بھی ایسے سانحات پر جوڈیشل انکوائری کمیٹیاں بنی ہیں مگر ان کا کوئی مثبت اور خیر خواہ نتیجہ نہیں نکلا۔ جامعہ تعلیم القرآن کے معصوم طلبہ اور نمازیوں کی شہادت حکومت پنجاب کے منہ پر ایک زور دار طمانچہ ہے۔ بار بار جامعہ تعلیم القرآن اور مسجد کمیٹی کی طرف سے انتظامیہ کو خبر دار کرنے کے باوجود حکومت مظلوم طلبہ اور عام شہریوں کی حفاظت کرنے سے غفلت برتی رہی۔جس کی وجہ سے یہ عظیم حادثہ رونما ہوا۔ان خیالات کا اظہار تنظیم اہل سنت والجماعت گلگت بلتستان وکوہستان کے امیر مولانا قاضی نثار احمد نے اپنے ایک بیان میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم لواحقین سے صبر جمیل کی درخواست کرتے ہیں اور پنجاب حکومت اور فیڈرل حکومت کو باخبر کرتے ہیں کہ جن دہشت گردوں نے معصوم اور بے گناہ طلبہ اور عام شہریوں کو شہید کیا ہے ان کو فوری گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچائے۔ بصورت دیگر تنظیم اہل سنت والجماعت سخت احتجاج پر مجبور ہو جائے گی۔

قاضی نثار احمد نے مزید کہا کہ ہم راولپنڈی اسلام آباد کے علماء کرام اور وفاق المدارس العربیہ کے مرکزی علماء اور ذمہ داروں کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ تاکہ ائندہ کے لیے کوئی لائحہ عمل طے کیا جاسکے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ شہداء کے لواحقین کو بھاری معاوضہ ادا کیا جائے۔یہ انتظامیہ کی غفلت نہیں تو اور کیا ہے کہ مدینہ مارکیٹ کے سامنے سے جلوس گزارنا قانونی طور پر پابندی تھی مگر انتظامیہ کی کھلی چھوٹ سے نہ جلوس نکالا گیا بلکہ اہلسنت کے خلاف نازیبا نعرے لگائے گئے اور نماز جمعہ ادا کرنے والے بے گناہ طلبہ و عام شہریوں کو گولیوں کا نشانہ بنایاگیا۔ کافی سارے لوگوں کو پکڑ کر ذبح کیا گیا اور بہت سارے طلبہ اور عام شہری ابھی تک لاپتہ ہیں۔ انتظامیہ کو چاہیے کہ فوری طور پر ان لاپتہ طلبہ اور شہریوں کو دہشت گردوں سے آزاد کروائے۔ایک اور سوال کے جواب میں قاضی نثاراحمد نے کہا کہ میڈیا بھی دوغلا کردار ادا کررہا ہے۔ ابھی تک درست اطلاعات سامنے نہیں لائے گئے۔اتنا بڑا سانحہ ہوا مگر میڈیا میں صرف ایک پٹی چلائی جاتی ہے ۔ہم سمجھتے ہیں کہ پنجاب حکومت، راوالپنڈی انتظامیہ اور دھشت گردوں نے مکمل پلاننگ کے تحت یہ کاروائی کی ہے ورنہ اتنی بڑی مارکیٹ جلائی گئی ، لوگوں کو روڈ پر ذبح کردیا گیا اور پورے جامعہ کو آگ لگا کر بھسم کردیا گیا اور حکومت ٹس سے مس نہیں ہورہی ہے۔ ہم قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں سے پرزور اپیل کرتے ہیں کہ فوری طور پر دھشت گردوں کو پکڑ کر کٹہرے میں لایا جائے۔

قاضی نثار احمد نے زور دیکر کہا کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے چیف جسٹس اس ظلم و بربریت کے خلاف فوری طور پر سوموٹو ایکش لے لیں اور مظلوموں کو انصاف فراہم کریں۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

pamir.times@gmail.com

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔