گلگت بلتستان میں مائیں اور بچے متوازن خوراک کی کمیابی کا شکار ہیں: مقررین

گلگت بلتستان میں مائیں اور بچے متوازن خوراک کی کمیابی کا شکار ہیں: مقررین

12 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+
mother-and-baby-icon-smallہنزہ نگر (بیورو رپورٹ) MCCSکا اہم مقصد پیدائش سے قبل اور پیدائش کے بعد بچوں کی اموات روکنا اور زچکی کے دوران خواتین کو موت سے بچانا ہے ۔ زچکی کے دوران ماں اور بچے کی اموات کے حوالے سے خطر ناک ممالک میں پاکستان بھی شامل ہے غیر صحت مند خواتین کی زچکی صیحی طریقے سے نہیں ہوپاتی ہے گلگت بلتستان میں خواتین کو 24گھنٹے کے لئے مطلوبہ خوراک مکمل طور پر دستیاب نہیں ہوتا۔ جس کی وجہ سے یہاں پر لوگوں میں وٹامن ڈی کی کمی ہے۔ ماں اور بچے کی صحت کے لئے ضروری خوراک کی فراہمی وقت کی اہم ضرورت ہے۔
ان خیالات کا اظہار مقررین نے وادی ہوپر نگر میں منعقدہ تقرینب سے خطاب کرتے ہوئے کہا۔ تقریب سے ایم سی سی ایس کے فدا حسین محمد یاسین ، فضل کریم اور ہیڈ ماسٹر رضوان علی ڈاکٹر سجاد علی ریٹائرڈ اساتذہ محمد اسحاق بحمد باقر زہرا ، شاہدہ اور نیر وغیر نے خطاب کیا۔ اس موقع پر مقررین نے کہا کہ زچکی کے دوران بنیادی سہولتیں نہ ہونے کے باعث اموات زیادہ ہوتے ہے اس طرح انسانیت کا قتل عام ہوتا ہے۔ شرح اموات روکنے کے لئے خواتین کو مناسب اور ضروری خوراک فراہم کرنا ضروری ہے۔
ایم سی سی ایس اس حوالے سے مختلف طبی مراکز کی ادویات اور دیگر ضروری سامان فراہم کر رہا ہے۔ اورخواتین میں آگاہی کی مہم بھی چلا رہا ہے۔ہم سب کی زمہ داری ہے کہ انے والی نسل کو بچانے کے لئے خواتین اور چھوٹے بچوں کی مناسب نگہداش کی جائے۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔