وادی کیلاش (بمبوریت) میں یوم سیاحت کے حوالے سے تقریب کا انعقاد

وادی کیلاش (بمبوریت) میں یوم سیاحت کے حوالے سے تقریب کا انعقاد

32 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

چترال ( بشیر حسین آزاد) ڈپٹی کمشنر چترال امین الحق نے کہا ہے ۔ کہ انسانی زندگی سے خوشی اور تفریح کو نکا لا جائے ۔ توزندگی بے معنی اور بے حس ہو کر رہ جاتی ہے ۔ اور سیاحت ایسی چیز ہے ۔ جو انسان کو معاش ، مصروفیات ، معلومات،تفریح اور خوشی سب چیزیں فراہم کرتا ہے ۔ اور دنیا کے کئی ممالک اور علاقے صرف سیاحتی آمدنی سے خوشحال زندگی گزار رہے ہیں ۔

DSCN7129ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز بمبوریت کے ایک مقامی ہو ٹل میں ایون اینڈ ویلیز ڈویلپمنٹ پروگرام ( اے وی ڈی پی ) کے زیر انتظام منعقدہ عالمی یوم سیاحت سمینار میں بطور مہمان خصو صی خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جس میں میجر پاک آرمی صدر محفل تھے ۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا ۔کہ چترال کی کیلاش ویلز اپنی تاریخ ، جغرافیہ اور منفرد کلچر کے علاوہ وسائل سے مالا مال علاقے ہیں ۔ اس کے باوجود یہاں غربت اور پسماندگی کی موجودگی انتہائی قابل افسوس ہے ۔ اور یہ ضروری ہے کہ ان حالات سے نکلنے کیلئے سیاحت سے وابستہ تمام سٹیک ہولڈرز اور مقامی کمیونٹی اپنے رویوں میں تبدیلی لائیں ۔ اپنی روایتی مہمان نوازی میں سیاحوں کیلئے مزید کشش پیدا کریں ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ یہاں سیاحت تو موجود ہے ۔ لیکن اس سے وابستہ افراد کے پاس سکلز کی بہت کمی ہے ۔ اسلئے سیاح دوست ماحول پیدا کرنے کیلئے تمام سٹیک ہولڈر کی تربیت نہایت ضروری ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ سیاح کیلاش وادیوں کیلئے اور مقامی لوگ اُن کیلئے بہت اہم ہیں ۔ڈپٹی کمشنر نے پہلی مرتبہ عالمی یوم سیاحت منانے اور سیاحت کو کیلاش وادیوں میں ترقی دینے کے حوالے سے اے وی ڈی پی کی کوششوں کی تعریف کی ۔ اور اس حوالے سے اپنے بھر پور تعاون کا یقین دلایا ۔

DSCN7121صدر محفل میجر پاک آرمی نے اپنے خطاب میں کہا ۔ کہ کیلاش ویلز میں سیاحوں کیلئے امن امان کا کوئی مسئلہ نہیں ہے ۔ اور ہماری کوشش ہے ۔ کہ سیاحوں کو آزاد اور پر امن ماحول فراہم کریں ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ مقامی سطح پر سیاحت سے انفرادی فوائد حاصل کرنے کے بے پناہ مواقع موجود ہیں ۔ لیکن ان سے استفادہ نہیں کیا جا رہا ۔ سمینار میں سابق چیرمین محکم الدین اور منیجر اے وی ڈی پی وزیر زادہ نے اس توقع کا اظہار کیا ۔ کہ اب ملک کے حالات میں مسلسل بہتری آرہی ہے ۔ اس بنا پر کیلاش وادیوں میں سیاحوں کی آمد میں اضافے کے توقعات ہیں ۔ اس لئے آنے والے مواقع سے خاطر خواہ فوائد حا صل کرنے کیلئے تمام سٹیک ہولڈز کے نمایندوں کی مشاورت سے لائحہ ترتیب دیا جائے گا اور حکمت عملی وضع کی جائے گی ۔ اس موقع پر کیلاش ویلیز ٹورزم ڈویلپمنٹ فورم (KVTDF) کا قیام عمل میں لایا گیا۔ جس کے لئے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے متفقہ طور پر اپنے نمایندوں کاانتخاب کیا۔ جن میں زاہد عالم مسلم کمیونٹی ، شیر محمد کیلاش اقلیتی کمیونٹی ، سہیل احمد ہوٹل ایسو سی ایشن ، عبدالجبار ٹرانسپورٹ ، لوک رحمت یوتھ،اکرام حسین کلچر میوزیم،ذرین خان ٹی سی کے پی اور دو افراد اے وی ڈی پی سے اس فورم کے ممبر ہوں گے ۔ جو اگلی نشست میں اپنے لئے چیر مین کا انتخاب کریں گے ۔ سمینار میں سہیل احمد نے ہوٹل ایسوسی ایشن ،ذرین خان ٹورزم کارپوریشن خیبر پختونخوا ، حضرت کریم گائڈ اور فوڈ ،اکرام حسین کیلاش کلچر اور ہیریٹیج، خاتون شاہی گل کیلاش ہنڈی کرافٹ، لوک رحمت کیلاش یوتھ اور زاہد عالم نے عمائدین علاقہ کی نمایندگی کرتے ہوئے خطاب کیا ۔اور کیلاش ویلیز میں سیاحت کی ترقی کے حوالے سے اے وی ڈی پی کے اقدامات کو سراہا ۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔