کیوں؟

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

شہنای کی آوازیں ہیں

سب محو رقص ہیں

مستی میں

ہر سمت اجالا بکھرا ہے

نغموں کی صدا ہے

بستی میں

کوئی غم ہے نہ پچھتاوا ہے کوئی

پھر کیوں ہے اداسی

ہستی میں؟

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments