چترال، زندگی میں بھی تبدیلی لانے کے لئے معاشرے کی صورتحال کوبدلنے کی ضرورت ہے،ڈپٹی کمشنرامین الحق

چترال، زندگی میں بھی تبدیلی لانے کے لئے معاشرے کی صورتحال کوبدلنے کی ضرورت ہے،ڈپٹی کمشنرامین الحق

10 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

nzede phot

چترال (نذیرحسین شاہ نذیر) ساؤتھ ایشیاء پارٹنرشپ پاکستان کے مالی معاونت سے سی اے پی ڈی پروگرام کے تحت (آرسی ڈی پی )رورل کمیونٹی ڈیویلپمنٹ پروگرام نے دیہی تنظیم اوچسٹ اورفیض آباد ہون کے میل اورفیمل نتظیمات کومعاشی خودکفالت کے حصول کے لئے آرا مشین،بلدک فیکٹری ،مکسچرمشین،فٹنگ مشین،سیلائی ،کڑائی مشین وغیرہ تقسیم کئے۔

پروگرام کے مہمان خصوصی ڈپٹی کمشنر چترال امین الحق نے آرسی ڈی پی کے خدمات کوخراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ رورل کمیونٹی ڈیویلپمنٹ پروگرام چترا ل میں امن اتحادکے ساتھ غربت میں کمی لانے کے حوالے سے بھی کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ امن وسکون برقراررکھے ،زندگی میں بھی تبدیلی لانے کے لئے معاشرے کی صورتحال کوبدلنے کی ضرورت ہے ۔ ڈپٹی کمشنرچترال نے آرسی ڈی پی کے ساتھ کام کرنے والے تنظیموں کوہرقسم کی تعاون کی یقین دہانی کی۔اس موقع پر رورل کمیونٹی ڈیویلپمنٹ پروگرام کے کوارڈینیٹر انجینئرتیمورشاہ نے کہاکہ آرسی ڈی پی 2012سے ساؤتھ ایشیاء پارٹنرشپ پاکستان کی تعاون سے چترال میں کام کررہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ چترا ل میں بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے اوراسے نکھارنے کی ضرورت ہے۔آرسی ڈی پی مقامی لوگوں پرزوردیاہے کہ وہ اجتماعی فائدے کے لئے مسلسل جدوجہدجاری رکھیں اپنے دیہی تنظیمات کومضبوظ بنائیں تاکہ اپس کے اتفاق سے وہ بہت کچھ حاصل کرسکے۔انہوں نے کہاکہ ہمارے ادارے چترال کی پسماندگی کودورکرنے کے لئے کوشان ہے اوراس سلسلے میں اوربھی وسائل پیداکئے جائیں گے۔

اس موقع پر ٹی ایم او چترال کریم اللہ ، ساؤتھ ایشیاء پارٹنرشپ پاکستان کے ڈسٹرکٹ کوارڈینیٹراسماعیل،تحصیل میونسپل افیسر رحمت خان اوردیگرمقریرین نے کہا کہ ساؤتھ ایشیاء پارٹنرشپ پاکستان اورآرسی ڈی پی چترال کی پسماندگی کومدنظررکھتے ہوئے کام کررہے ہیں۔عوامی اورسرکاری محکموں کے درمیان فاصلے بھی ختم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اگرعوام میں اگاہی پیدا ہوجائے توعلاقے کی پسماندگی بھی ختم ہوجائے گا۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔