زرگراندہ چترال میں پرائیویٹ سکول کی دیوار اور گیٹ گرنے سے پانچ طلباء زخمی

چترال ( نذیرحسین شاہ نذیر) زرگراندہ چترال میں ایک پرائیویٹ سکول کی دیوار اور گیٹ گرنے کے سبب سکول کے پانچ طلباء زخمی ہوئے ۔ جن میں سے تین طلباء کو ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد فارغ کر دیا گیا ہے ۔ جبکہ دو طالب علم عباس احمد ولد اشرف کلاس فرسٹ ساکن ٹھیگشین چترال اور حذیفہ محمود ولد شیر محمود ساکن موڑدہ چترال ہسپتال میں زیر علاج ہیں ۔ مذکورہ سکول کے طلبہ اُس وقت حادثے کا شکار ہوئے ۔ جب سکول چُھٹی ہونے کے بعد وہ گھروں کو جانے کیلئے سکول کے گیٹ کے قریب کھڑے تھے ۔ کہ اچانک سے گیٹ دیوار سمیت اُن پر آگرا ۔ جس سے پانچ بچے زخمی ہوئے ۔ اور اُنہیں ڈی ایچ کیو ہسپتال پہنچا دیا گیا ۔ عباس کا دائیں ٹانگ اورحذیفہ کی ران کی ہڈی ٹوٹ چکی ہے ۔ بچوں کے والدین نے ہمارے نمائند ے بات چیت کرتے ہوئے کہا ۔ کہ حادثے کے بعد ابھی تک سکول کا کوئی ذمہ دار ہسپتال میں بچوں کے پاس نہیں آیا ۔ اور نہ بچوں کی خیریت دریافت کی گئی ۔ جس سے سکول انتظامیہ کی بے حسی واضح ہوتی ہے ۔ نیز سکول کے گیٹ کا اس طرح گرنا سکول کی ناقص تعمیر کی نشاندہی کرتا ہے ۔ ذرائع کے مطابق پرائیویٹ سکولوں کے نام سے چترال کے طول و عرض میں بے شمار ایسے سکول موجود ہیں ۔ جن کو انسانی جانوں کیلئے خطرہ قرار دیا جاسکتا ہے ۔ لیکن حصول تعلیم کو آسان بنانے کی آڑ میں قانونی تقاضے پورے کئے بغیر اور بغیر بلڈنگ کی ویریفیکیشن اور ماحول کے معائنے کے سکولوں کی جسٹریشن کی جاتی ہیں ۔ جس سے آئے دن اس قسم کے حادثات رونما ہوتے ہیں ۔ جبکہ چترال ریڈ زون میں واقع ہونے کی وجہ سے یہاں سکولوں کی تعمیرات پر سب سے زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے ۔

آپ کی رائے

comments