چترال میں ایک اور طالب علم بنا استاد کی وحشیانہ تشدد کا نشانہ، مقدمہ قائم

چترال میں ایک اور طالب علم بنا استاد کی وحشیانہ تشدد کا نشانہ، مقدمہ قائم

9 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

چترال(بشیر حسین آزاد) تفصیلات کے مطابق جغور مسلم ماڈل سکول کے ٹیچر فضل مولا کی طرف سے سکول کے ساتویں جماعت کے طالب اریان ولد فضل ربی لال پر وحشیانہ تشدد کیا گیا جس سے بچے کی حالت غیر ہوگئی۔بچے کے والد نے حکام سے مذکورہ سکول اور ٹیچر کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔بچے کے والد کے مطالبے پر سکول کے استاد کے خلاف تھانہ چترال میں چائلڈ پروٹیکشین افیسر کی موجودگی میں آیف آئی ار کاٹی گئی ہے۔چائلڈ پروٹیشن کے افیسر نے تھانہ چترال میں طالب علم سے ملاقات کی اور انُ سے واقعے کی تفصیلات معلوم کی ۔ واضح رہے کہ ایک مہینے کے اندر چترال میں طالب علموں پر جسمانی تشدد کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔

fir copy

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔