چترال پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل کاسرکاری رائفل سے خود پر فائر کرکے خود کُشی کی ناکام کو شش

چترال ( محکم الدین ) چترال پولیس کے ایک ہیڈ کنسٹبل نے سرکاری رائفل سے خود پر فائر کرکے خود کُشی کی ناکام کو شش کی ۔ جسے شدید زخمی حالت میں پشاور ریفر کیا گیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق چترال پولیس کے ہیڈ کنسٹیبل ضیاء الاسلام نے چترال پولیس لائن کے اندر جمعہ کے روز خود کُشی کرنے کی کو شش کی ۔ اور سرکای رائفل سے خود پرفائر کیا ۔ جسے شدید زخمی حالت میں ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال کے آئی سی یو میں ابتدائی علاج کے بعد پشاور ریفر کیا گیا ۔ چترال پولیس کے مطابق ہیڈ کنسٹیبل ضیاء الاسلام کو ایک جرم کی پاداش میں ایک دن پہلے سزا کے طور پر کواٹرگاڈ میں بند کر دیا تھا ۔ جمعہ کے روز انہوں نے ڈیوٹی پر موجود پولیس کے جوانوں کی منت سماجت کرکے جمعہ کی نماز پڑھ کر واپس آنے کی یقین دہانی کرکے نکلا ۔ اور اپنی سرکاری رائفل سے خود پر فائر کیا ۔ جسے فوری طور پر ہسپتال پہنچایا گیا ۔ جہاں ڈاکٹروں نے ابتدائی طبی امداد کے بعد اُسے پشاور ریفر کر دیا ہے ۔ ڈی پی او چترال نے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں اُن کے والد کو تسلی دی اور ہر قسم کے علاج معالجے کا یقین دلایا ۔ خود کُشی کرنے والے ضیاء الاسلام کے والد نے کہا ۔ کہ وہ یہ بات سمجھنے سے قاصر ہیں ۔ کہ اُن کا بیٹا کیونکر خود کُشی کرنے پر مجبور ہوا ۔ تاہم ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر عبد الستار نے کہا ۔ کہ یہ کوئی گھریلو تنا زعے کی وجہ ہو سکتی ہے ۔ لیکن ابھی تک واقع کے بارے میں صحیح معلومات نہ ہو سکی ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments