گلگت میں قراقرم ماونٹین انٹرنیشنل فلم فیسٹیول کا آغاز

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

گلگت ( سٹاف رپورٹر )گلگت میں پہلا بین الاقوامی فلم فیسٹول شروع ہو گیا ہے جسے قراقرم ماونٹین انٹر نیشنل فلم فیسٹول کا نام دیا گیا ہے۔ پاکستان یوتھ آوٹ ریچ فاونڈیشن کے زیر اہتمام ہو نے والے دو روزہ فیسٹول کی افتتاحی تقریب گلگت میں منقعد ہو ئی چیف سیکرٹری گلگت بلتستان ڈاکٹر کاظم نیاز نے فیسٹول کا افتتاح کیا۔ افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اْنہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں اس طرح کے عالمی سطح کے فلمی میلے کے انعقاد سے جہاں علاقے میں سیاحت کو فروغ ملے گا وہاں نوجوانوں کو بھی اپنی صلاحیتوں کو اْجاگر کرنے کا موقع ملے گا۔ اُنہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے یوتھ میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے ان کو موقع ملے تو ملک کانام روشن کر سکتے ہیں۔ گلگت بلتستان سیاحت کے لئے موزوں ہے ہر سال پاکستان اور بیرون ملک سیاح یہاں آتے ہیں ان سیاحوں کو بہتر موقع فراہم کرنے کے لئے انتظامیہ اقدامات کر رہی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں خواتین کو اپنے صلاحیتوں کو بروئے کار لانے میں بہتر موقع موجود ہے ۔ یوتھ اپنے تعلیم کے ساتھ غیر نصابی سرگرمیوں میں بھی حصہ لے کر اپنے خطے کا نام روشن کرسکتے ہیں ۔ اُنہوں نے کہا کہ فلم فیسٹول میں مشہور کوہ پیماوں میں یادگاری شیلڈ پیش کر ان کی حوصلہ افرائی کی گئی جو کہ قابل ستائش ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ممتاز کوہ پیماء ثمینہ خیال بیگ نے کہا کہ اس قسم کے فیسٹول سے گلگت بلتستان کے کوہ پیماوں کو عالمی سطح پر پذیرائی کا موقع ملے گا۔ اْنہوں نے نوجوانوں بلخوص خواتین پر زور دیا کہ وہ دیگر شعبوں کی طرح کوہ پیمائی کو بھی شعبے کے طور پر اپنائے اور ملک و قوم کا نام روشن کرے گلگت بلتستان میں مرودں کے ساتھ خواتین کو بھی اپنے صلاحیتوں کو اُجاگر کرنے کا موقع مل رہا ہے انشا اللہ گلگت بلتستان کے خواتین اس خطے کا نام روشن کرنے میں اپنا کردار ادا کرینگے۔ معروف کوہ پیماء مراز علی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان میں گلوبل وارننگ سے شدید خطرہ ہے گلیشئر ختم ہو رہے ہیں ہماری ذمہ داری ہے کہ ان قیمتی وسائل کی حفاظت کرے۔ یہ گلیشئر ہمارے قومی اثاثہ ہے یوتھ ماحول کو آلودگی سے بچانے میں اپنا رول ادا کرے۔تقریب کے آخر میں چیف سیکرٹری ڈاکٹر کاظم نیاز نے گلگت بلتستان کے مشہور کوہ پیماوں میں شیلڈ تقسیم کئے۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments