ایک نااہل شخص کی ایما پر مستعفی ہونے کا بیان وزیر اعلی کی اپنی اہلیت پر سوالیہ نشان ہے، سعدیہ دانش

استور(شمس الرحمن شمس ) پیپلز پارٹی کی صوبائی سیکرٹری اطلاعات سعدیہ دانش نے کہا ہے کہ ایک نااہل شخص کی ایما پر مستعفی ہونے کا بیان وزیر اعلیٰ کی اپنی اہلیت پر سوالیہ نشان ہے۔سیاسی نظرئے کی بات کرنے والے خود نظریہ ضرورت کی پیداوار ہیں۔دوسروں پر لعنت بھیجنے والے خود عدالتی لعنت یافتہ ہیuںy ۔کینسر ہسپتال کی تعمیر کی باتیں کرنے والے بذات خود سیاسی کینسر ہیں اور پہلے اس کا علاج ضروری ہے۔ثابت ہوگیا کہ صوبائی حکومت کی نظر میں عوام کی نہیں بلکہ نااہل لوگوں کی اہمیت ہے۔ ممکنہ عدم اعتماد سے گھبرا کر وزیر اعلیٰ نے قبل از وقت ہتھیار ڈالنے کا ذہن بنا لیا ہے۔ لاڑکانہ پر تنقید کرنے والوں کی آنکھوں کو قصور میں ہونے والے انسانیت سوز مظالم کیوں نظر نہیں آتے۔ صوبائی حکومت عوام کے بجائے اپنے مفادات کی جنگ لڑ رہی ہے۔جس حکومت کا اپنا مستقبل غیر یقینی ہے انکی جانب سے گلگت بلتستان کا مستقبل سنوارنے کی باتیں مذاق سے زیادہ کچھ نہیں۔وزیر اعلیٰ نے وفاق کےخلاف جو بیانات دئے تھےاس تناظر میں انٰ کو اپنے مستقبل کی فکر کرنی چاہیے۔وزیر اعلیٰ چند ٹھیکیداروں کے ہاتھوں یرغمال بنے ہوئے ہیں ۔اور حفیظ سرکار کی سیاست کا مرکز و محور ٹھیکے ہیں۔پیپلز پارٹی ملک کی واحد اعتدال پسند اور جمہوری جماعت ہے. فرقہ واریت اور علاقائیت کی سیاست کرنے والوں کا ریکارڈ عوام سمیت سب کے پاس ہے۔ پیپلز پارٹی ملک کی سیاست کا روشن پہلو ہے جبکہ نواز لیگ تاریکیوں کی سیاست کرتی ہے۔ ایک نااہل شخص کے کہنے پر استعفیٰ کا بیان جمہوریت کی توہین ہے۔ نواز لیگ کوئی سیاسی نظریہ نہیں بلکہ ایک آمر کے نظریہ ضرورت کے تحت وجود میں آنے والی جماعت ہے۔ جس نے ہمیشہ ذاتی مفادات کی خاطر جمہوریت کو نقصان پہنچایا ہے۔ آج جو عدلیہ پر آمروں کی سرپرستی کا الزام عائد کر رہے ہیں دراصل وہ خود ہمیشہ آمروں کے سامنے ڈھیر ہوئے ہیں ۔ وزیر اعلیٰ بتائیں کہ کیا گلگت بلتستان میں ان کے رشتہ داروں کے علاوہ کوئی اور ٹھیکیدار نہیں ہے جو سارے بڑے پراجیکٹ چن چن کر اپنے عزیزوں میں بانٹے گئے ہیں ۔ اور ان تمام ٹھیکوں کے ریٹ غیر ضروری طور پر زیادہ دئے گئے ہیں ۔وزیر اعلیٰ دوسروں پر عوامی لعنت کی بات کرنے سے پہلے اپنے نااہل قائدین پر عدالتی لعنت سے سبق حاصل کریں ۔اسکے علاوه گلگت بلتستان کے عوام کے مسلسل احتجاج اور دھرنے صوبائی حکومت پر عوامی لعنت کا سب سے بڑا ثبوت، ہیں

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments