غذر کے بالائی علاقے بتھریت اور چھشی میں‌آج بھی بنیادی انسانی سہولیتیں‌دستیاب نہیں، واحد ڈسپنسری دواوں سے خالی

غذر(بیورو رپورٹ)غذر کے بالائی علاقے بتھریت اور چھشی کے عوام اس دور جدید میں بھی صحت ،پانی دیگر زندگی کی سہولتوں سے محروم ہیں ہزاروں آبادی والے اس علاقے کو ہر حکومت نے اپنے دور اقتدار میں مکمل طور پرنظرانداز کیا ہے اس علاقے کی ابادی پندرہ ہزار کی ابادی والے علاقے کو ہر حکومت نے اس کو مکمل طور پر نظر انداز کیا ہے بتھریت جیسے بڑے گاؤں میں ایک ڈسپنسری ہے مگر وہاں پر بھی دوائی نہ ہونے کے برابر ہے جس کی وجہ سے اس دور جدید میں بھی یہاں کے عوام صحت اور پینے کے صاف پانی کی سہولت سے محروم ہیں اور صحت کے حوالے سے بھی یہاں کے عوام کو سخت پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور معمولی مریض کو کئی کلومیٹر کا سفر طے کر کے گوپس ہسپتال لایا جاتا ہے ایک ڈسپنسری موجود ہے مگر وہاں پر بھی ادویات نہ ہونے کے برابر ہے جبکہ سردیوں کے موسم میں اس علاقے کا زمینی رابطہ دیگر علاقوں سے کٹ جاتا ہے پینے کا صاف پانی کی عدم دستیابی سے بھی یہاں کے عوام کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور پانی صاف نہ ملنے کی وجہ سے پیٹ کی مختلف بیماریوں کا شکار ہیں علاقے کے غلام دین۔محمدخان۔جانباز اور جان خان اور دیگر نے حکومت وقت سے یہاں کے مسائل کے حل کا مطالبہ کیا ہے ان کا کہنا ہے کہ سردیوں کے موسم میں پانی پر برف جم جانے سے یہاں کے مکینوں کا پانی کا حصول بھی مشکل ہوجاتا ہے اس علاقے کے عوام کو اس دور جدید میں صحت کی سہولتیں دستیاب نہیں ہے علاقے سے ووٹ لیکر کامیاب ہونے والے ہر ممبر قانون ساز اسمبلی نے اس علاقے کے مسائل کے حل کی طرف کوئی توجہ نہیں دی اس حوالے سے یہاں کے عوام نے کئی بار حکمرانوں کے پاس اپنے مسائل لیکر گئے مگر صرف تسلیوں کے علاوہ کسی بھی مطالبے پر کوئی عملدرامد نہیں ہوا ۔۔۔۔۔

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments