حسنین قتل کیس میں شعیب کو مرکزی مجرم قرار دیا گیا

گلگت: آٹھ سالہ حسنین قتل کیس کی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی ھے کہ مرکزی ملزم شعیب احمد ھے جو بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی میں ملوث رہا ھے اور یہ جنسی درندہ سکول اور محلہ میں معصوم بچوں کو اپنی حوس کا نشانہ بناتا رہا ھے اور زیادتی کے بعد ان کو بلیک میل کرتا ھے متاثرہ بچوں کے ذریعے نیا شکار حاصل کرتا ھے اس بات کی تصدیق دیگر دو گرفتار کم سن ملزمان اسامہ اور ابرار الحق نے دوران پولیس تحقیقات کیا ھے 

7 نومبر کو مرکزی ملزم نےدیکر حسنین اور دیگر دو بچوں کو اپنے ساتھ دریا کنارے لیے گیا جہان اسامہ اور ابرار کو پہرہ داری پر مامور کیا اور خود حسنین کے ساتھ زیادتی کرنے لگا اس دوران اچانک شعیب نے معصوم حسنین اس خوف میں کہ یہ گھر جاکر والدین کو شکایت نہ کرے چاقو نکال مارنا شروع کیا جس سے اس کی موت واقع ہوئی

اس کے ہمراہ موجود اسامہ اور ابرار کا قتل میں ہاتھ نہیں ھے وہ صرف شریک جرم ہیں کیوں کہ وہ موقع پر موجود رہےہیں اور پہرہ داری کی ھے

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments