اسلام امن ومحبت کا دین ہے اور ہمیں اسے دوسردوسرے تمام چیزوں پرمقدم رکھنا چاہئے۔پرنس کریم آغاخان

چترال (بشیر حسین آزاد) اسماعیلی مسلم کمیونٹی کے پیشوا اور 49واں حاضر امام ہزہائی نس پرنس کریم آغا خان نے ہفتے کے دن چترال کا دورہ کیا اور گرم چشمہ کے علاوہ بونی کے مقام پر اپنے پیروکاروں سے خطاب کیا جوکہ ہزاروں کی تعداد میں وہاں پر جمع ہوگئے تھے۔

چترال ائر پورٹ پر ایم این اے شہزادہ افتخا رالدین ، ضلع ناظم مغفرت شاہ، کمشنر ملاکنڈ ڈویژن ظہیرالاسلام ، ریجنل پولیس افیسر اختر حیات اور کمانڈنٹ چترال ٹاسک فورس کرنل معین الدین نے ان کا استقبال کیا جبکہ بونی کے مقام پر ڈپٹی کمشنر چترال ارشاد سودھر نے ان کو خوش آمدید کہا۔

دونوں مقامات پر اپنے پیروکاروں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے تعلیم کی اہمیت پر زور دیا اورامن وامان کو علاقے کی ترقی کے لئے ناگزیر قرار دیا اور کہاکہ اسلام امن ومحبت کا دین ہے اور ہمیں اسے دوسرے تمام چیزوں پر مقدم رکھنا چاہئے ۔

ہزہائی نس آغاخان کے دیدار عام کے لئے گرم چشمہ کے مقام پر 60ہزار اور بونی کے مقام پر 80ہزار افراد کی گنجائش کے لئے خصوصی طور پر دیدار گاہ تعمیر کئے گئے تھے ۔

چترال میں خراب موسم کے باعث ہزہائنس کا خصوصی سی 130طیارہ چترال نہ آسکا جس کی وجہ سے ان کی آمد میں تین گھنٹے کی تاخیر ہوئی جبکہ آغاخان فاونڈیشن کے ہیلی کاپٹروں نے انہیں اسلام آباد سے چترال پہنچادیا۔ بعدازاں ہزہائی نس نے چترال میں رات قیام کیا ۔

دریں اثناء چترال ائر پورٹ پر ضلع ناظم مغفرت شاہ نے انہیں مختصر بریفنگ دیتے ہوئے چترال اور خوروگ کے درمیان فلائٹ شروع کرانے اور چترال اور تاجکستان کے درمیان زمینی روٹ قائم کرنے کی اہمیت اُجاگر کرتے ہوئے انہیں علاقے کی تیز تر ترقی میں ناگزیر قرار دیاجس پر ہزہائنس نے کہاکہ چترال کے ساتھ ان کا بہت ہی گہرا تعلق ہے اور وہ علاقے مسائل سے بخوبی آگاہ ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments