سکردو:‌ سرکاری ہسپتال کا رضا کار میل نرس کم عمر لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے کی کوشش کے الزام میں‌گرفتار

سکردو(کرائم رپورٹر) ڈی ایچ کیو ہسپتال سکردو کے رضاکار میل نرس کا کم عمر لڑکی پر مبینہ جنسی حملہ, لڑکی کے شور مچانے پر والدین نے دروازہ توڑ کر بچی کو بچا لیا. پولیس نے ملزم کے خلاف مبینہ جنسی حملہ کی واقعات کے تحت مقدم درج کر لیاِ پولیس کے مطابق شگر کے بالائی گاوں سے تعلق رکھنے والی مسماۃ (ن) اپنی والدین کے ہمراہ DHQہسپتال علاج کے لئے آئی تھی جہاں روندو سے تعلق رکھنے والے رضاکار میل نرس سید منظور حسین طورمک نے ہمدردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے لڑکی اور والدین کے علاج و معالجے میں مدد کی اور انہیں اپنے ڈیرے پر لے گیا جہاں لڑکی برتن دھونے غسل خانے گئی تو پیچھے سےاندر گھس کر دروازہ بند کر کے لڑکی سے ریپ کرنے کی کوشش کی جس پر لڑکی نے شور مچایا اور کمرے میں بیٹھے والدین نے بھی شور شرابا کر دیا اور دروازہ پٹنا شروع کر دیا. والدین کے شور شرابے پر اہل محلہ پہنچ گئے اور پولیس کو اطلاع دی جس پر پولیس نے موقع سے لڑکے کو گرفتار کر کے زنا بالجبر کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا.ہمالیہ کے رابطے پر ملزم نے بتایا کہ وہ پہلے سے لڑکی کو جانتا نہیں تھا اور نہ ہی کوئی رابطہ تھا صرف ہسپتال میں تقریبا ڈیڑھ گھنٹے ساتھ رہا تھا ہمالیہ کے سوال پر ملزم نے بتایا کہ اس نے باتھ روم کا دروازہ بند کر کے لڑکی پر جنسی حملہ کرنے کی کوشش کی ھے۔ایس ایچ او سٹی تھانہ سکردو الیاس حسین نے ہمالیہ کو بتایا کہ کیس کی مزید تحقیقات کی جارہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments