صوبائی حکومت نے ہنزہ، بالخصوص بالائی علاقوں، کو مکمل نظر انداز کر دیا ہے، آصف سخی

ہنزہ (بیورو رپورٹ) عوامی ورکرز پارٹی ہنزہ کے سربراہ و امیدوار گلگت بلتستان اسمبلی آصف سخی نے کہا ہے کہ چپورسن گوجال کی ہزاروں کی آبادی دنیا سے کٹی ہوئی ہے اور گزشتہ ایک ماہ سے واحد رابطہ سڑک بند ہے لیکن صوبائی حکومت اور ضلعی انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ہیں ۔انہوں نے جمعہ کے روز میڈیا کے نمائندوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت بالعموم ہنزہ اور بالخصوص بالائی علاقوں چپورسن اور شمشال کے عوام کے ساتھ نارواں سلوک کررہی ہے جس کو کھبی برداشت نہیں کیا جائے گا،ہنزہ گوجال کے عوام گزشتہ ایک ماہ سے جس کرب سے گزر رہے ہیں وہ انتہائی غیر مناسب اور انسانی حقوق کی سراسر خلاف ورزی ہے۔انہوں نے مزید کہا کی انتخابات کے دنوں میں سیاسی نمائندے اس رابطہ سڑک سمیت دیگر مسائل پر بھر پور سیاسی دکان چمکاتے ہیں اور مشکلات کے دنوں میں منظر عام سے غائب ہوتے ہیں جس کی ہم بھر پور مزمت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کی بڑی بڑی دعوے کرنے والے ڈی سی ہنزہ جو آئے روز ہنزہ کے عوام کو کسی نہ کسی بہانے سے تنگ کرنے کی کوشش کرتے ہیں لیکن رواں برفباری کے بعد موصوف آپنی دفتر سے باہر نکلنے کی کوشش بھی نہیں کررہے ہیں ۔بالائی علاقوں کے عوام کرب کی زندگی گزارہے ہیں لیکن ان کو کوئی فرق نہیں پڑھ رہا ہے ۔ انہوں نے ضلعی انتظامیہ اور حکام بالا سے پرزورمطالبہ کیا ہے کہ چپورسن اورشمشال کے عوام کے مسائلفوری طور پر حل کیا جائے وگرنہ عوامی ورکرز پارٹی عوام کو لے کر سڑکوں پر نکل آئے گی اور ڈی سی کو علاقہ بدر کرنے تک عوام دھرنہ جاری رکھے گی ۔

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments