چترال سکاوٹس اے ٹیم نے ڈسٹرکٹ کپ پولو ٹورنامنٹ جیت لی

چترال ( نامہ نگار) ڈسٹرکٹ کپ پولو ٹورنامنٹ کا فائنل میچ چترال سکاؤٹس اے ٹیم اور چترال لیویز کے مابین دلچسپ مقابلے کے بعد اختتام پذیر ہو ا ۔ جس میں چترال سکاؤٹس ٹیم نے دو کے مقابلے میں پانچ گول سے کامیابی حاصل کرکے ٹرافی اپنے نام کر لی ۔ فائنل میچ کے مہمان خصوصی ضلع ناظم چترال حاجی مغفرت شاہ تھے ۔ جبکہ ڈپٹی کمشنر چترال شہاب حامد یو سفزئی ،چترال سکاؤٹس کے کرنل انتظامیہ کے دیگر آفیسران اور ہزاروں کی تعداد میں تماشائی موجود تھے ۔ میچ کے پہلے ہاف میں چترال لیویز کی طرف سے چترال سکاؤٹس ٹیم پر بڑا دباؤ تھا ۔ اور پہلا گول بھی لیویز کے حصے میں آیا تھا ۔ لیکن چترال سکاؤٹس ٹیم بر وقت خود کو سنبھالا ۔ اور شاندار کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے لیویز کے دو گولوں کے مقابلے میں تین گول کئے ۔ لیویز ٹیم کوئی دوسرے ہاف میں کوئی گول نہ کر سکی ۔ جبکہ مقابلے کی چترال سکاؤٹس ٹیم دو مزید گول کرنے میں کامیاب ہوئی ۔ اور ڈسٹرکٹ کپ پولو ٹورنامنٹ کے فاتح قرار پائے ۔

میچ دیکھنے کیلئے پولو گراؤنڈ تماشائیوں سے کھچا کھچ بھرا ہوا تھا ۔ جس میں ملکی اور غیر ملکی سیاح بھی بڑی تعدا میں موجود تھے ۔ ضلع ناظم نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پو لو چترال کا روایتی کھیل ہے ۔ جس کے فروغ کیلئے اس کی سرپرستی میں کوئی کوتاہی نہیں کی جائے گی ۔ اور شندور فیسٹول ، بروغل فیسٹول ،کاغلشٹ فیسٹول سمیت تمام سپورٹس فیسٹول کو سپورٹ کیا جائے گا ۔ یہ فیسٹولز سیاحت کے فروغ میں اہم کردار ادا کرتے ہیں ۔ ہم چاہتے ہیں کہ چترال معاشی طور پر مستحکم ہو ۔ انہوں نے کہا کہ چترال موجودہ وقت میں مشکلات اور آمائش سے دوچار ہے ۔ اور ہمیں اُمید ہے ۔ کہ سی پیک کی تعمیر لواری ٹنل کی تکمیل اور چترال ہائیڈرو پاور کی پیدوار شروع ہونے کے بعد علاقے میں خوشحالی آئے گی ۔ ضلع ناظم نے ہر کھلاڑی کیلئے ایک ایک لاکھ روپے انعام کا اعلان کیا ۔ جکہ شندور فیسٹول کے کھلاڑیوں کیلئے بھی ایک ایک لاکھ روپے انعام کا پیشگی اعلان کرکے کھلاڑیوں کو بھر پور تیاری کی ہدایت کی ، انہوں نے کہا  کہ ملک دُشمن عناصر کو چترال کا امن ایک آنکھ نہیں بھاتی ۔ اس لئے وہ اس امن کو تباہ کرنے کیلئے مختلف سازش بُن رہے ہیں ۔ لیکن ہم چترال کے عوام اُن سے ہرگز غافل نہیں ہیں ۔

بعد آزان ڈپٹی کمشنر چترال شہاب حامد یوسفزئی اور چترال سکاؤٹس کے کرنل نے کھلاڑیوں میں انعامات تقسیم کئے ۔ اس موقع پر کھلاڑیوں نے ڈھول اور شہنائی کی سُر پر ڈانس کیا ۔

آپ کی رائے

comments