ضلع نگر سے تعلق رکھنے والا نوجوان طالبعلم ٹریفک حادثے میں شدید زخمی ہونے کے بعد جان کی بازی ہار گیا

نگر ( اقبال راجوا) گورنمنٹ انٹر کالج چھلت نگر کا ہونہار طالبعلم نوید احمد جان بحق، 23مارچ کی مرکزی تقریب میں غم کی خبر سن کر تمام شرکاء آبدیدہ ہو گئے، ہم جماعت طلباء و طالبات دھاڑیں مار مار کر رونے لگے۔

طالبعلم  کی شہرگ گزشتہ دنوں نلت کے مقام پر سامنے سے آتی ہوئی وین سے ٹکرانے کے نتیجے میں کٹ گئی تھی۔ موٹر سائکل پر سوار اس کے دونوں ساتھی بھی زخمی ہو گئے تھے ۔ایک ساتھی ابھی تک ہسپتال میں زیر علاج جبکہ تیسرا دوست ہسپتال سے فارغ ہونے کے بعد دہم کے امتحانات میں مصروف ہے۔

بدقسمت موٹر سائکل چھلت ٹاؤن سے ہنزہ کی جانب جاتے ہوے شہید ارشاد حسین والی بال اسٹیڈئم سے چند گز کے فاصلے پر سامنے سے آتی ہوئی وین سے ٹکرا گئی جس سے موٹر سائکل پر سوار تینوں دوست زخمی ہو گئے ۔انٹر کاج چھلت کے طالبعلم نوید احمد کی شہہ رگ کٹنے سے خون بہت زیادہ بہہ گیا جسے غلمت ہسپتال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت منتقل کیا گیا تھا۔ جہاں تین دن تک زندگی اور موت کی سخت کشمکش میں رہنے کے بعد طالبعلم نوید احمد اپنے خالق حقیقی سے جا ملے۔لوگوں کی ایک بہت بڑی تعداد نے مرحوم کے جنازے میں شرکت کی اور آہوں اور سسکیوں میں مرحوم کو آبائی قبرستان مین سپرد خاک کیا گیا ہے۔

عوامی حلقوں نے مرحوم کے والد مدرس ریٹائرڑ علی محمد اور مرحوم کے بڑے بھائی معروف جیئالوجسٹ خادم حسین سے دلی ہمدردی اور تعذیت کا اظہار کیا ہے۔ نوجوان طالبعلم کے المناک موت سے علاقہ پورا سوگوار ہو گیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

آپ کی رائے

comments