بکریوں کی چرائی کے تنازعے پر تصادم کی صورت میں ذمہ دار ڈپٹی کمشنر چترال ہوگا، عمائدین کریم آباد کا پریس کانفرنس سے خطاب

32 views
0
Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

چترال(بشیر حسین آزاد)ضلعی انتظامیہ اہلیان کریم آباد اور شغور کے شہزادہ حیدر الملک کے مابین تنازع کوغیر جانبدار رہ کر حل کرے بصورت دیگر کریم آباد کے 800گھرانوں کے لوگ انتہائی اقدام اُٹھانے پر مجبور ہونگے۔منگل کے روز چترال پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کریم آباد کے عمائدین ضلع کونسلر محمد یعقوب ،کونسلر مراد شاہ،سابق کونسلر پناہ خان،سابق کونسلر محمد صابر خان،حضرت علی،شیر علی ،قربان خان اور درجنوں دوسرے افراد نے کہا کہ علاقے کے عوام نے سیلاب کی تباہی سے بچنے کیلئے بکریاں پالنے پر پانج سال کے لئے پابندی لگادی تھی پانج سال کا عرصہ گزرنے کے بعد مزید پابندی لگادی گئی ان دونوں معاہدوں میں شغور کے شہزادہ حیدر الملک جن کا کچھ چراگاہ کریم آباد میں ہے اور پہلے اُسکے بھی دوسوبکریاں مذکورہ چراگاہ میں چرتے تھے۔وہ بھی ان دونوں معاہدوں کے فریق تھے اور اتفاق رائے سے بکریاں نہ پالنے پر معاہدہ ہوا تھاجس کے وجہ سے علاقے کے لوگوں نے اپنے بکریاں سستے داموں فروخت کیے اور گذشتہ سیلابوں سے علاقہ بھی محفوظ رہا۔اُنہوں نے کہا کہ چند دن قبل شہزادہ حیدر الملک نے معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے 200بکریاں مذکورہ چراگاہ پر بھیج دئیے۔باشندگان علاقہ نے اسسٹنٹ کمشنر کو رپورٹ کردی تو اے ۔سی نے چراگاہ میں دفعہ 145لگادیا۔جسکے خلاف شہزادہ حیدر الملک نے ڈپٹی کمشنر چترال کے ساتھ ساز باز کرکے دوبارہ بکریاں چرانے لگا۔اُنہوں نے کہا کہ علاقے کے عوام نے ڈپٹی کمشنر چترال سے بھی رابطہ کیا توکوئی شنوائی نہیں ہوئی۔جس کے بعد علاقے کے عوام نے مجبوراً شہزادہ کے بکریوں کو چراگاہ سے نکال کر شغور تھانے کے پولیس کے تحویل میں دے دیا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ اگر دوبارہ ان بکریوں کو چراگاہ لایا گیا تو علاقے کے عوام اور شہزادے کے مابین جو تصادم ہوگا تو اس کی تمام تر زمہ داری ڈپٹی کمشنر چترال پر ہوگی۔اُنہوں نے کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس کرنل نظام الدین شاہ سے بھی اس معاملے میں اپناکردار ادا کرنے کی درخواست کی۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on LinkedInPin on PinterestShare on Google+

آپ کی رائے

comments

About author

پامیر ٹائمز

پامیر ٹائمز گلگت بلتستان، کوہستان اور چترال سمیت قرب وجوار کے پہاڑی علاقوں سے متعلق ایک معروف اور مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی اولین ویب پورٹل ہے۔ پامیر ٹائمز نوجوانوں کی ایک غیر سیاسی، غیر منافع بخش اور آزاد کاوش ہے۔